728x90 AdSpace

  • تازہ ترین

    Monday, October 23, 2023

    اموات کی شرح کو کم کرنے کے لیے چھاتی کے سرطان سے متعلق آگاہی پیغام گھر گھر تک پہنچایا جائے، صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی



     اسلام آباد،
     صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے  ملک بھر میں چھاتی کے کینسر کے بارے میں آگاہی کا پیغام ہر گھر تک پہنچانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ  اس مرض کی جلد تشخیص سےشرح اموات کو کم کیا جا سکے۔ پاکستان نے پولیو کی بیماری سے کامیابی سے نمٹا ہے اور اس تجربے نے حکومت کو بعد میں کوریڈ19  سے کامیابی سے نمٹنے میں بھی مدد کی۔  ملک میں چھاتی کے کینسر سے متعلق آگاہی مہم بھی بہت مؤثر طریقے سے چلا ئی جارہئ ہے۔وہ یہاں بریسٹ کینسر سے متعلق آگاہی پروگرام سے خطاب کررہے تھے۔  صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ صحت کے دیگر اہم مسائل بشمول دماغی صحت، سٹنٹنگ اور خواتین کی صحت کے بارے میں آگاہی بھی چھاتی کے سرطان سے متعلق آگاہی مہم کے ساتھ بڑھائی جانی چاہیے کیونکہ ایک صحت مند قوم کے لیے خواتین کو صحت مند رکھنا بہت ضروری ہے۔ ملک میں خاندانی نظام پر روشنی ڈالتے ہوئے صدر نے کہا کہ عورت ایک خاندان کی اہم رکن ہے جسے صحت مند، مالی طور پر بااختیار اور معاشرے میں کسی بھی قسم کی ہراسانی سے محفوظ رکھا جانا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ خواتین کو معاشی طور پر بااختیار بنانا ملک کی مجموعی اقتصادی ترقی سے منسلک ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کل آبادی کا 24 فیصد دماغی امراض میں مبتلا ہے جس کی وجہ بیماریاں اور مالی مسائل شامل ہیں۔صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے طویل مدتی مانع حمل مصنوعات تک لوگوں کی رسائی بڑھا کر آبادی کو کنٹرول کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا کیونکہ یہ صحت اور معیشت دونوں لحاظ سے ملک کی ترقی کی کلید ہے۔چین کی مثال دیتے ہوئے صدرمملکت  نے کہا کہ ملک کی تیز رفتار ترقی صحت اور تعلیم پر خصوصی توجہ کی وجہ سے ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک میں وسائل کی کمی کے باعث بعد کے مرحلے میں دائمی بیماری سے بچنے کے لیے روک تھام پر توجہ مرکوز کی جانی چاہیے۔خاتون اول بیگم ثمینہ علوی نے خواتین پر زور دیا کہ وہ بیماری کی بروقت تشخیص کو یقینی بنانے کے لیے خود پتہ لگانے کا طریقہ سیکھیں۔خواتین کو موت کی شرح کو کم سے کم کرنے کے لیے خود معائنہ کرنے کی عادت ڈالنی چاہیے۔مہم کی کامیابی میں میڈیا کے کردار کو سراہتے ہوئے خاتون اول نے کہا کہ میڈیا کو اس مرض کے بارے میں شعور اجاگر کرنے میں اپنا کردار جاری رکھنا چاہیے۔انہوں نے بتایا کہ میں نے چھاتی کے کینسر سے متعلق آگاہی مہم کا آغاز پانچ سال قبل کیا تھا اور اب جس موضوع پر بات کرنا تکلیف اور ممنوع سمجھا جاتا تھا، اب ہر سطح پر اس پر بحث ہو رہی ہے۔اس بیماری کے بارے میں آگاہی بڑھانے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے، انہوں نے امید ظاہر کی کہ یہ مہم ملک بھر میں ہر گھر تک پیغام کو مزید بڑھانے میں مدد دے گی۔انہوں نے بتایا کہ ہر سال تقریباً 44000 خواتین چھاتی کے کینسر کی وجہ سے موت کے منہ میں جاتی ہیں، جلد تشخیص سے ان اموات سے بچا جا سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ دنیا میں ابتدائی تشخیص کا تناسب 98 فیصد ہے تاہم پاکستان میں زیادہ تر کیسز تیسرے اور چوتھے مرحلے پر رپورٹ ہوئے جہاں موت کے امکانات بہت زیادہ تھے۔ تاہم، انہوں نے آگاہی مہم کی وجہ سے پہلے اور دوسرے مرحلے میں رپورٹ ہونے والے کیسز کی بڑھتی ہوئی تعداد پر اطمینان کا اظہار کیا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں چھاتی کے کینسر کے مریضوں میں اموات کی شرح 48 فیصد ہے جو خطرناک حد تک زیادہ ہے۔ انہوں نے لوگوں سے کہا کہ وہ اس بیماری پر بات کرتے ہوئے کوئی ہچکچاہٹ محسوس نہ کریں۔بیگم ثمینہ علوی نے کہا کہ اس بیماری کے بارے میں ممنوعات اور خرافات اب ختم ہو رہے ہیں اور لوگ اب ہر فورم پر چھاتی کے کینسر کے مرض کے بارے میں آزادانہ گفتگو کر رہے ہیں۔اس موقع پر نگراں وزیر صحت ڈاکٹر ندیم جان نے کہا کہ حکومت کو ملک میں صحت کے بجٹ کو جی ڈی پی کے 4 فیصد تک بڑھانے کی ضرورت ہے جو اس وقت جی ڈی پی کا صرف ایک فیصد ہے۔ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کی پاکستان کی کنٹری نمائندہ ڈاکٹر پالیتھا گوناراتھنا مہیپالا نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان میں چھاتی کے کینسر کے بارے میں شعور اجاگر کرنے پر صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اور خاتون اول بیگم ثمینہ علوی کو سراہا۔

    • Blogger Comments
    • Facebook Comments

    0 کمنٹس:

    Post a Comment

    Item Reviewed: اموات کی شرح کو کم کرنے کے لیے چھاتی کے سرطان سے متعلق آگاہی پیغام گھر گھر تک پہنچایا جائے، صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی Rating: 5 Reviewed By: ALL IN ONE
    Scroll to Top